سورة الشعراء - آیت 26

قَالَ رَبُّكُمْ وَرَبُّ آبَائِكُمُ الْأَوَّلِينَ

ترجمہ تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

موسی نے کہا وہ تمہارا رب ہے اور تمہارے گزرے ہوئے باپ دادوں کا رب ہے۔

تفسیرتیسیرالقرآن - مولانا عبدالرحمن کیلانی

پارہ نمبر ١٩ سورۃ الشعرآئ [١٩] درباریوں کے کوئی جوان دینے سے پہلے ہی موسیٰ (علیہ السلام) نے بھرے دربار میں پھر فرعون کو مخاطب ہو کر کہا : تم یہ سمجھے بیٹھے ہو کہ ملک بھر کے وسائل معاش کو اپنے قبضہ میں کرلینے کے بعد تم ہی اپنی رعایا کے پروردگار بن گئے ہو۔ میں اس پروردگار کی بات کر رہا ہوں جس کا تمام تر وسائل پر براہ راست کنٹرول ہے۔ اگر وہ ایک سال یا چند سال بارس ہی نہ برسائے تو تم رعیت تو درکنار اپنی خوراک تک کے لئے ترس جاؤ گے۔ رب العالمین وہ ہے جو خود تمہیں اور تمہارے سب آباء و اجداد کو رزق دیتا رہا ہے اور وہی تمہاا حقیقی پروردگار ہے۔ میں اس رب العالمین کا رسول ہوں۔