سورة مريم - آیت 19

قَالَ إِنَّمَا أَنَا رَسُولُ رَبِّكِ لِأَهَبَ لَكِ غُلَامًا زَكِيًّا

ترجمہ تیسیر القرآن - مولانا عبدالرحمن کیلانی صاحب

وہ بولے : ''میں تو تمہارے پروردگار کا بھیجا [٢٠] ہوا ہوں اور اس لیے آیا ہوں کہ تمہیں ایک پاک سیرت لڑکا دوں''

تفسیر اشرف الحواشی - محمد عبدہ الفلاح

ف 6 یعنی میرے بارے میں کوئی برا خیال دل میں نہ لائو۔ میں تو اسی خدا کی طرف سے بھیجا ہوا فرشتہ ہوں جس کی تم پناہ مانگ رہی ہو۔ عطا کرنے والا اگرچہ خدا ہے مگر چونکہ حضرت جبرئیل خدا کے بھیجے ہوئے تھے اس لئے انہوں نے عطا کروں کا لفظ استعمال فرمایا۔ (شوکانی)