سورة ھود - آیت 100

ذَٰلِكَ مِنْ أَنبَاءِ الْقُرَىٰ نَقُصُّهُ عَلَيْكَ ۖ مِنْهَا قَائِمٌ وَحَصِيدٌ

ترجمہ ترجمان القرآن - مولانا ابوالکلام آزاد

(اے پیغمبر) یہ (پچھلی) آبادیوں کی خبروں میں سے چند کا بیان ہے جو ہم تجھے سنا رہے ہیں، ان میں سے کچھ تو اس وقت قائم ہیں، کچھ بالکل اجڑ گئیں۔

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(٨٣) اللہ تعالیٰ نے سات انبیائے اکرام اور ان کی قوموں کے واقعات بیان کرنے کے بعد نبی کریم سے فرمایا کہ ہم یہ واقعات اس لیے بیان کر رہے ہیں تاکہ آپ کفار مکہ کو سنا دیں، شاید کہ وہ ان کے انجام سے عبرت حاصل کریں، ان بستیوں میں سے بعض کے کھنڈرات اب تک باقی ہیں، اور بعض کا نشان تک مٹ چکا ہے۔