سورة التوبہ - آیت 100

وَالسَّابِقُونَ الْأَوَّلُونَ مِنَ الْمُهَاجِرِينَ وَالْأَنصَارِ وَالَّذِينَ اتَّبَعُوهُم بِإِحْسَانٍ رَّضِيَ اللَّهُ عَنْهُمْ وَرَضُوا عَنْهُ وَأَعَدَّ لَهُمْ جَنَّاتٍ تَجْرِي تَحْتَهَا الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا ۚ ذَٰلِكَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ

ترجمہ ترجمان القرآن - مولانا ابوالکلام آزاد

اور مہاجرین اور انصار میں جو لوگ سبقت کرنے والے سب سے پہلے ایمان لانے والے ہیں اور وہ لوگ جنہوں نے راست بازی کے ساتھ ان کی پیروی کی تو اللہ ان سے خوشنود ہو وہ اللہ سے خوشنود ہوئے، اور اللہ نے ان کے لیے (نعیم ابدی کے) باغ تیار کردیئے جن کے نیچے نہریں بہہ رہی ہیں (اور اس لیے وہ خشک ہونے والے نہیں) وہ ہمیشہ اس (نعمت و سرور کی زندگی) میں رہیں گے اور یہ ہے بہت بڑی فیروز مندی۔

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(٧٧) بادیہ نشین مخلص مسلمانوں کے بعد اب ان نفوس قدسیہ کا ذکر ہورہا ہے جو اللہ کے نزدیک ان بادیہ نشینوں سے کئی گنا برتر و بالا اور افضل و اعلی ہیں۔ سابقین اولین کی تفسیر میں علماء کے کئی اقوال ہیں کسی نے کہا ہے کہ اس سے مراد وہ لوگ ہیں جنہوں نے دونوں قبلوں کی طرف رخ کر کے نماز پڑھی، کسی نے کہا : جنہوں نے غزوہ بدر میں شرکت کی، کسی نے کہا : جو لوگ ہجرت سے پہلے اسلام لائے تھے، اور جو لوگ ان کے بعد آئے سے مراد وہ سات انصاری مسلمان ہیں جنہوں نے عقبہ اولی کے پاس رسول اللہ کے ہاتھ پر بیعت کی تھی اور پھر وہ ستر مسلمان جنہوں نے دوسرے سال رسول اللہ کے ہاتھ پر بیعت کی تھی، اور وہ تمام انصار جنہوں نے مصعب بن عمیر کی تبلیغ سے متاثر ہو کر ہجرت سے پہلے اسلام قبول کیا تھا۔ لیکن راجح یہ ہے کہ سابقین اولین میں وہ تمام مہاجرین داخل ہیں جنہوں نے ہجرت کرنے میں پہلے کر کے رسول اللہ کا دل مضبوط کیا اور دوسروں کے لیے نمونہ بنے اور وہ تمام انصار جنہوں نے ہجرت سے پہلے اسلام قبول کرلیا تھا اور جب رسول اللہ مدینہ تشریف لائے تو آپ کا ساتھ دیا۔ ابو منصور بغدادی کا قول ہے کہ ہمارے اصحاب کا اس پر اجماع ہے کہ سب سے افضل خلفائے اربعہ ہیں، پھر غزوہ بدر میں شریک ہونے والے پھر احد میں شریک ہونے والے، پھر مقام حدیبیہ میں رسول اللہ کے ہاتھ پر بیعت کرنے والے جسے بیعت الرضوان کہا جاتا ہے، اور جو لوگ ان کے بعد آئے، سے مراد تمام متاخرین صحابہ، تابعین اور وہ تمام لوگ ہیں جو قیام تک اقوال و افعال میں سابقین اولین کے نقش قدم پر چلتے رہیں گے۔