سورة الرحمن - آیت 12

وَالْحَبُّ ذُو الْعَصْفِ وَالرَّيْحَانُ

ترجمہ ترجمان القرآن - مولانا ابوالکلام آزاد

اور اس زمین میں بھوسہ والااناج اور خوشبودار پھول ہیں

السعدی تفسیر - عبدالرحمن بن ناصر السعدی

(وَالْحَبُّ ذُو الْعَصْفِ) اور بھوسے والے دانے (اناج)۔ یعنی نال دار اناج جسے گاہا جاتا ہے پھر مویشیوں وغیرہ کے لیے اس کے بھوسے سے استفادہ کیا جاتا ہے اس میں گیہوں، جو، مکئی چاول اور چنا وغیرہ شامل ہیں۔ ( وَالرَّیْحَانُ) اور خوشبودار پھول۔ اس میں یہ احتمال بھی ہے کہ اس سے رزق کی تمام اقسام مراد ہوں جس کو آدمی کھات ہیں تب یہ خاص پر عطف عام کے باب میں شمار ہوگا اور اس کے معنی یہ ہوں گے کہ اللہ نے اپنے بندوں کو عمومی اور خصوصی خوراک اور رزق سے نوازا ہے یہ احتمال بھی ہے کہ اس سے مراد معروف ریحان ہو اللہ تعالیٰ نے مختلف انواع کی خوش کن اور فاخرہ خوشبوں کو زمین میں سے مہیا کرکے ان سے اپنے بندوں کو نوازا ہے جو روح کو مسرت عطا کرتی ہیں اور ان سے نفوس میں انشراح پیدا ہوتا ہے۔