سورة الأنبياء - آیت 103

لَا يَحْزُنُهُمُ الْفَزَعُ الْأَكْبَرُ وَتَتَلَقَّاهُمُ الْمَلَائِكَةُ هَٰذَا يَوْمُكُمُ الَّذِي كُنتُمْ تُوعَدُونَ

ترجمہ ترجمان القرآن - مولانا ابوالکلام آزاد

انہیں (روز قیامت کی) بڑی سے بڑی ہولناکی بھی ہراساں نہ کرے گی، فرشتے انہیں بڑھ کرلیں گے (ّاور کہیں گے) یہ ہے وہ تمہارا دن جس کا (کلام حق میں) وعدہ کیا گیا تھا۔

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

١٠٣۔ ١ بڑی گھبراہٹ سے موت یا صور اسرافیل مراد ہے یا وہ لمحہ جب دوزخ اور جنت کے درمیان موت کو ذبح کردیا جائے گا۔ دوسری بات یعنی صور اسرافیل اور قیام قیامت سیاق کے زیادہ قریب ہے۔