سورة ق - آیت 19

وَجَاءَتْ سَكْرَةُ الْمَوْتِ بِالْحَقِّ ۖ ذَٰلِكَ مَا كُنتَ مِنْهُ تَحِيدُ

ترجمہ مکہ - مولانا جوناگڑھی صاحب

اور موت کی بے ہوشی حق لے کر پہنچی یہی ہے جس سے تو بدکتا پھرتا تھا (١)

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(١١) بالاخر دنیا سے اس کے رخصت ہونے کا وقت آجاتا ہے اور موت کی سختی اس پر طاری ہوجاتی ہے اور بعث بعدالموت اور روز قیامت کے جزا و سزا کا نقشہ اس کی آنکھوں کے سامنے پھر جاتا ہے اور جن حقائق کا وہ انکار کرتا تھا ان سے پردہاٹھا جاتا ہے اور اس وقت اس سے کہا جاتا ہے کہ یہی وہ موت ہے جس سے تم راہ فرار اختیار کرتے تھے۔