سورة مريم - آیت 65

رَّبُّ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ وَمَا بَيْنَهُمَا فَاعْبُدْهُ وَاصْطَبِرْ لِعِبَادَتِهِ ۚ هَلْ تَعْلَمُ لَهُ سَمِيًّا

ترجمہ مکہ - مولانا جوناگڑھی صاحب

آسمانوں کا، زمین کا اور جو کچھ ان کے درمیان ہے سب کا رب وہی ہے تو اسی کی بندگی کر اور اس کی عبادت پر جم جا۔ کیا تیرے علم میں اس کا ہم نام ہم پلہ کوئی اور بھی ہے؟ (١)

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(٤١) آپ کا رب آسمانوں اور زمین کا رب ہے، اور ان کے درمیان جتنی مخلوقات ہیں ان سب کا رب ہے، اس ذات باری تعالیٰ کے بارے میں یہ کیسے تصور کیا جاسکتا ہے کہ غفلت اور بھول چوک اس پر طاری ہوسکتی ہے، اس لیے اے میرے نبی ! آپ اسی کی عبادت کیجیے اور تادم حیات اس پر ثابت قدم رہیے کیا آپ کے علم میں آپ کے رب کا کوئی شبیہ و مثیل اور کوئی مد مقابل ہے، جس کی طرف آپ التفات کریں، تاکہ وہ آپ کی حاجت پوری کردے؟ جب ایسی بات نہیں ہے تو اس کے سوا کوئی چارہ کار نہیں کہ اسی کے سامنے سر تسلیم خم کیا جائے، اسی کی عبادت کی جائے اور اس راہ پر پیش آنے والی ہر تکلیف پر صبر کیا جائے۔