سورة ابراھیم - آیت 15

وَاسْتَفْتَحُوا وَخَابَ كُلُّ جَبَّارٍ عَنِيدٍ

ترجمہ مکہ - مولانا جوناگڑھی صاحب

اور انہوں نے فیصلہ طلب کیا (١) اور تمام سرکش ضدی لوگ نامراد ہوگئے۔

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(١٣) انبیاء نے اللہ تعالیٰ سے دعا کی کہ اے اللہ ! ہمیں ہمارے دشمنوں پر غلبہ نصیب فرمایا ہمارے اور ان کے درمیان آخری فیصلہ کردے، تو اللہ تعالیٰ نے ان کی مدد فرمائی اور انہیں ان کے دشمنوں پر غالب کردیا، اور سرکش و نافرمان کو منہ کی کھانی پڑی، اور جہنم بھی ان کا پیچھا کر رہا ہے، جہاں انہیں پینے کے لیے جہنمیوں کا پیپ ملے گا جسے پیتے وقت ان کی جان بلا میں رہے گی، اور موت ہر چہار جانب سے انہیں گھیرے رہے گی لیکن وہ مریں گے نہیں اور سخت اور نہ ختم ہونے والا عذاب ان کے پیچھے لگا رہے گا۔