سورة البقرة - آیت 39

وَالَّذِينَ كَفَرُوا وَكَذَّبُوا بِآيَاتِنَا أُولَٰئِكَ أَصْحَابُ النَّارِ ۖ هُمْ فِيهَا خَالِدُونَ

ترجمہ مکہ - مولانا جوناگڑھی صاحب

اور جو انکار کر کے ہماری آیتوں کو جھٹلائیں، وہ جہنمی ہیں اور ہمیشہ اسی میں رہیں گے۔ (١)

تسہیل البیان فی تفسیر القرآن - ام عمران شکیلہ بنت میاں فضل حسین

جو اللہ کی آیات کو جھٹلائیں گے، اللہ کے احکامات کو نہ مانیں گے، اللہ کی نشانیوں کا انکار کریں گے، وہ ہمیشہ ہمیشہ آگ میں رہیں گے۔ ارشادِ باری تعالیٰ ہے:  ﴿وَ اعْتَصِمُوْا بِحَبْلِ اللّٰهِ جَمِيْعًا وَّ لَا تَفَرَّقُوْا﴾ (آل عمران: ۱۰۳) ’’اور سب مل کر اللہ کی رسی کو مضبوطی سے پکڑ لو اور جدا جدا نہ ہو جاؤ ۔‘‘ انسان کی اہمیت : (۱)زمین میں اختیارات دیے (۲) آزادی دی(۳) زمین میں پوشیدہ خزانوں کا کھوج لگانے اور اُسے مسخر کرنے کا اختیار دیا۔ (۴) کائنات کو مسخر کرنے کے لیے قوت طاقت اور علم دیا، تاکہ شر و فساد ختم کرکے بھلائی کو پروان چڑھائے۔