سورة العلق - آیت 3

اقْرَأْ وَرَبُّكَ الْأَكْرَمُ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

پڑھو اور آپ کا رب بڑا کریم ہے

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(٢) چونکہ نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) جبریل (علیہ السلام) کو اچانک اپنے سامنے پا کر گھبرا گئے تھے، اسی بطور تاکید آپ سے کہا گیا کہ آپ پڑھئے اور چونکہ نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے پڑھنے سے معذرت کی تھی اور کہا تھا کہ مجھے پڑھنا نہیں آتا، اس لئے آپ سے کہا گیا کہ آپ کا وہ رب آپ کو پڑھنے کا حکم دے رہا ہے جو بے پایاں کرم و احسان والا ہے، جس کے جودو عطا کی کوئی انتہا نہیں، جس نے پڑھنا لکھنا سکھا کر انسان پر احسان عظیم کیا ہے اور جس نے قلم کے ذریعہ اسے وہ سب سکھایا جو وہ پہلے سے نہیں جانتا تھا۔