سورة النبأ - آیت 4

كَلَّا سَيَعْلَمُونَ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

ہرگز نہیں عنقریب انہیں معلوم ہوجائے گا

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(٢) آیات (٤، ٥) دلیل ہیں کہ بعث بعد الموت کے بارے میں پوچھنے والے وہ کفار تھے جو اس کا انکار کرتے تھے، اس لئے کہ ان دونوں آیتوں میں موجود دھمکی اور وعید شدید صرفک افروں کے لئے ہے۔ اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ وہ اپنی روح نکلتے وقت تکذیب بعث بعد الموت اور انکار توحید و رسالت کا انجام اچھی طرح جان لیں گے اور جب اپنی قبروں سے زندہ کر کے اٹھائے جائیں گے اور جہنم کی طرف بھیجے جائیں گے تو انہیں اپنے کفر و انکار کا نتیجہ خوب معلوم ہوجائے گا۔