سورة المنافقون - آیت 8

يَقُولُونَ لَئِن رَّجَعْنَا إِلَى الْمَدِينَةِ لَيُخْرِجَنَّ الْأَعَزُّ مِنْهَا الْأَذَلَّ ۚ وَلِلَّهِ الْعِزَّةُ وَلِرَسُولِهِ وَلِلْمُؤْمِنِينَ وَلَٰكِنَّ الْمُنَافِقِينَ لَا يَعْلَمُونَ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

کہتے ہیں کہ ہم مدینہ پہنچ گئے تو عزت والا ذلیل کو نکال دے گا، حالانکہ عزت تو اللہ اور اس کے رسول اور مومنین کے لیے ہے مگر منافق نہیں جانتے

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(6) اسی رئیس المنافقین نے کہا تھا :” اللہ کی قسم ! مدینہ واپس پہنچ کر ہم میں جو عزت والا ہے، وہ ذلیل کو نکال دے گا“ او اس منافق کے ذہن میں ہ بات نہیں آئی کہ فی الحقیقت عزت و غلبہ اور سربلندی تو اللہ، اس کے رسول، اور مومنوں کے لئے ہے، لیکن منافقین اپنی کو رمغزی کے سبب اس حقیقت کا ادراک کرنے سے قاصر ہیں۔