سورة الصف - آیت 4

إِنَّ اللَّهَ يُحِبُّ الَّذِينَ يُقَاتِلُونَ فِي سَبِيلِهِ صَفًّا كَأَنَّهُم بُنْيَانٌ مَّرْصُوصٌ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

اللہ کو وہ لوگ پسند ہیں جو اس کی راہ میں صف بستہ ہو کر لڑتے ہیں گویا کہ وہ ایک سیسہ پلائی ہوئی دیوار ہیں

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(3) اوپر ابن عباس (رض) کی روایت گذر چکی ہے، کچھ مسلمانوں نے خواہش کی کہ اگر ہمیں معلوم ہوجاتا کہ اللہ تعالیٰ کو کون سا عمل سب سے زیادہ پسند ہے، تو ہم اسے کرتے۔ اس وقت یہ آیت نازل ہوئی۔ قاشانی نے لکھا ہے، آدمی اللہ کی راہ میں اسی وقت جان دیتا ہے جب اس کے دل میں اللہ کی خالص محبت بیٹھ گئی ہو اور اس کی محبت ہر چیز کی محبت پر غالب آگئی ہوجیسا کہ اللہ نے سورۃ البقرہ آیت (561) میں فرمایا ہے : (والذین امنوا اشد حباللہ) ” اہل ایمان اللہ سے سب سے زیادہ محبت کرتے ہیں“ اور جب بندہ اللہ کی محبت میں اس مقام پر پہنچ جاتا ہے تو وہ بھی اس سے محبت کرنے لگتا ہے۔ سورۃ المائدۃ آیت (45) میں آیا ہے : (یحبھم ویحبونہ) ” اللہ ان سے محبت کرتا ہے، اور وہ لوگ اللہ سے محبت کرتے ہیں“ اسی لئے اللہ کے نزدیک محبوب ترع مل اس کی راہ میں جہاد کنا ہے۔