سورة الرحمن - آیت 31

سَنَفْرُغُ لَكُمْ أَيُّهَ الثَّقَلَانِ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

اے جن اور انسانوں عنقریب ہم تم سے باز پرس کرنے کے لیے فارغ ہوں گے

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(١٤) واحدی نے مفسرین کے حوالے سے لکھا ہے کہ اس آیت کریمہ میں جن وانس کے لئے زبردست دھمکی ہے اور قاسمی نے شہاب کے حالے سے لکھا ہے کہ اس آیت کریمہ میں صرف وعید ہی نہیں ہے، بلکہ اللہ کے نیک بندوں کے لئے ثواب کا وعدہ بھی ہے۔ اس لئے کہ (سنفرع لکم) کا معنی یہ ہے کہ اے جن و انس ! قیامت کے دن ہم تمہارا حساب لیں گے اور تم میں جو اچھے ہوں گے انہیں ان کے نیک اعمال کا اچھا بدلہ دیں گے اور جو برے ہوں گے انہیں سزا دیں گے اور جیسا کہ آیت (٢٦) کی تفسیر میں لکھا جا چکا ہے، یہ بھی اللہ کی نعمت ہے کہ وہ اپنے عدل و انصاف کے تقاضوں کے مطابق ظالموں کو سزا دے گا، اور نیکوں کو جنت اور اس کی نعمتوں سے نوازے گا۔ اسی لئے اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ اے جن و انس ! تم اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤ گے؟!