سورة النجم - آیت 17

مَا زَاغَ الْبَصَرُ وَمَا طَغَىٰ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

نہ نظر بہکی نہ حد سے متجاوز ہوئی

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(١٠) رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو اس وقت جو کچھ دکھایا گیا، اس سے آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی نظر نہ ادھر ادھر ہوئی اور نہ اس منتہائے مقصود سے ذرا بھی آگے بڑھی یعنی اتنا ہی کیا جتنے کا انہیں حکم دیا گیا اور اسی پر قناعت کی جو انہیں دیا گیا۔ مفسرین لکھتے ہیں کہ اس آیت کریمہ میں اللہ کے ساتھ نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے انتہائے ادب کی تصویر کشی کی گئی ہے کہ آپ اس مقام پر غایت ادب کے ساتھ ٹکٹکی لگائے رہے اور جو کچھ انہیں دکھایا گیا، اسے ہی دیکھتے رہے، ذرا بھی کسی دوسری طرف ملتفت نہیں ہوئے اور نہ آپ کی آنکھیں اس تجلی کی دید سے تھکیں۔