سورة محمد - آیت 35

فَلَا تَهِنُوا وَتَدْعُوا إِلَى السَّلْمِ وَأَنتُمُ الْأَعْلَوْنَ وَاللَّهُ مَعَكُمْ وَلَن يَتِرَكُمْ أَعْمَالَكُمْ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

پس تم سستی نہ کرو اور صلح کی درخواست نہ کرو، تم ہی غالب رہنے والے ہو۔ اللہ تمہارے ساتھ ہے وہ تمہارے اعمال ہرگز کم نہیں کرے گا

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(١٨) مومنوں کو اللہ نے نصیحت کی ہے کہ تم لوگ اللہ اور اس کے رسول کے دشمنوں کے خلاف جہاد کرنے میں ہرگز اپنی کمزوری ظاہر نہ ہونے دو، اور جہاد کی طاقت ہونے کے باوجود دشمنوں کو صلح کی پیشکش نہ کرو، بہرحال غلبہ تمہیں ہی حاصل ہوگا اور سر بلند تم ہی ہو گے اور جب تک تم اللہ کی رسی کو مضبوطی سے پکڑے رہو گے اللہ تمہاری مدد کرتا رہے گا اور تمہارے نیک اعمال کا اجر کچھ بھی کم نہیں کرے گا، بلکہ پورا بدلہ دے گا اور اپنے فضل و کرم سے زیادہ دے گا۔