سورة الأحزاب - آیت 52

لَّا يَحِلُّ لَكَ النِّسَاءُ مِن بَعْدُ وَلَا أَن تَبَدَّلَ بِهِنَّ مِنْ أَزْوَاجٍ وَلَوْ أَعْجَبَكَ حُسْنُهُنَّ إِلَّا مَا مَلَكَتْ يَمِينُكَ ۗ وَكَانَ اللَّهُ عَلَىٰ كُلِّ شَيْءٍ رَّقِيبًا

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

اس کے بعد آپ کے لیے دوسری عورتیں حلال نہیں ہیں اور نہ اس کی اجازت ہے کہ ان کی جگہ اور بیویاں کرلیں خواہ ان کا حسن آپ کو کتنا ہی اچھا لگے البتہ لونڈیاں رکھنے کی آپ کو اجازت ہے، اللہ ہر چیز پر نگراں ہے

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(42) اس آیت کریمہ کی تفسیر میں علماء کے کئی اقوال ہیں : ابن عباس، مجاہد اور ضحاک وغیرہم کا خیال ہے کہ یہ آیت محکم ہے اور آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو نو بیویوں کے علاوہ عورتوں سے شادی کرنے سے روک دیا گیا ہے۔ بعض کہتے ہیں کہ اس آیت کا حکم آیت (51) کے ذریعہ منسوخ ہوگیا اور آپ کے لئے دوسری عورتوں سے شادی کرنا مباح ہوگیا، لیکن آپ نے امہات المومنین کا دل رکھنے کے لئے کسی اور سے شادی نہیں کی۔ شوکانی نے اسی رائے کو ترجیح دی ہے۔ ابی بن کعب اور عکرمہ وغیرہ کی رائے ہے کہ آیت (50) میں جن عورتوں کا ذکر آیا ہے، اس آیت کے نزول کے بعد ان کے علاوہ عورتیں آپ کے لئے حلال نہیں رہیں۔ صاحب محاسن التنزیل نے اسی رائے کی حمایت کی ہے اور اس کی تائید میں ابی بن کعب کا یہ قول نقل کیا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے آیت (٥٠) میں آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے لئے متعدد اقسام کی عورتوں سے شادی کرنے سے روک دیا گیا ہے۔ بعض کہتے ہیں کہ اس آیت کا حکم آیت (51) کے ذریعہ منسوخ ہوگیا اور آپ کے لئے دوسری عورتوں سے شادی کرنا مباح ہوگیا، لیکن آپ نے امہات المومنین کا دل رکھنے کے لئے کسی اور سے شادی نہیں کی۔ شوکانی نے اسی رائے کو ترجیح دی ہے۔ ابی بن کعب اور عکرمہ وغیرہ کی رائے ہے کہ آیت (50) میں جن عورتوں کا ذکر آیا ہے، اس آیت کے نزول کے عبد ان کے علاوہ عورتیں آپ کے لئے حلال نہیں رہیں۔ صاحب محاسن التنزیل نے اسی رائے کی حمایت کی ہے اور اس کی تائید میں ابی بن کعب کا یہ قول نقل کیا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے آیت (50) میں آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے لئے متعدد اقسام کی عورتوں سے شادی کرنا حلال قرار دیا، پھر اس آیت میں کہا کہ مذکورہ بالا اقسام کی عورتوں کے علاوہ سے شادی کرنا آپ کے لئے جائز نہیں رہا۔ ترمذی نے ابن عباس (رض) سے روایت کی ہے کہ اس آیت کے ذریعہ نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو مومنہ مہاجرہ عورتوں کے علاوہ دوسری عورتوں سے شادی کرنے سے روک دیا گیا۔ چنانچہ مسلمان عورتوں کے علاوہ دوسری عورتیں آپ کے لئے حرام کردی گئیں۔