سورة القدر - آیت 1

إِنَّا أَنزَلْنَاهُ فِي لَيْلَةِ الْقَدْرِ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

ہم نے اس قرآن کو شب قدر میں نازل کیا ہے

السعدی تفسیر - عبدالرحمن بن ناصر السعدی

(اللہ تبارک وتعالی نے قرآن کی فضیلت اور اس کی بلند قدرومنزلت بیان کرتے ہوئے فرمایا (اِنَّآ اَنْزَلْنٰہُ فِیْ لَیْلَۃِ الْقَدْرِ) بے شک ہم نے اسے شب قدر میں نازل کیا۔ جیسا کہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا (انا انزلنہ فی لیلۃ مبراکۃ۔ الدخان ٣)۔ بے شک ہم نے اسے بابرکت رات میں اتارا ہے۔ اس کاشب قدر میں نازل کرنایہ ہے کہ اللہ نے قرآن کے نازل کرنے کی ابتدا رمضان المبارک میں اور شب قدر میں کی، شب قدر کے ذریعے سے اللہ تعالیٰ نے اپنے بندوں پر عام رحمت فرمائی بندے جس کاشکر ادا نہیں کرسکتے۔ اس کی عظیم قدرومنزلت ور اللہ تعالیٰ کے ہاں اس کی فضیلت کی بنا پر اس کو (لیلۃ القدر) کے نام سے موسوم کیا گیا نیز اس لیے بھی اس کو (لیلۃ القدر) کہا گیا کہ سال بھر میں جو کچھ واقع ہوتا ہے یعنی عمر، رزق، دیگر تقدیر وغیرہ اس میں مقدر کردی جاتی ہیں۔