سورة المعارج - آیت 38

أَيَطْمَعُ كُلُّ امْرِئٍ مِّنْهُمْ أَن يُدْخَلَ جَنَّةَ نَعِيمٍ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

کیا ان میں سے ہر ایک یہ لالچ رکھتا ہے کہ وہ نعمت بھری جنت میں داخل کردیا جائے گا

السعدی تفسیر - عبدالرحمن بن ناصر السعدی

(ایطمع کل امری منھم ان یدخل جنۃ نعیم) کیا ان میں سے ہر شخص تو یہ توقع رکھتا ہے کہ نعمت کے باغ میں داخل کیا جائے گا۔ یعنی کسی سبب کی بنا پر وہ توقع رکھتے ہیں جبکہ ان سب کا حال یہ ہے کہ انہوں نے کفر اور رب کائنات کے انکار کے سوا کچھ آگے نہیں بھیجا ؟ بنا بریں فرمایا (کلا) یعنی معاملہ ان کی آرزوں کے مطابق ہوگا نہ وہ اپنی قوت کے ذریعے سے ہر وہ چیز حاصل کرسکیں گے جسے وہ چاہیں گے۔