سورة الانعام - آیت 134

إِنَّ مَا تُوعَدُونَ لَآتٍ ۖ وَمَا أَنتُم بِمُعْجِزِينَ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

بے شک وہ جس کا تم سے وعدہ کیا جارہا ہے ضرور آنے والی ہے اور تم کسی صورت عاجز کرنے والے نہیں۔“ (١٣٤)

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

١٣٤۔ ١ اس سے مراد قیامت ہے اور تم عاجز نہیں کرسکتے کا مطلب ہے کہ وہ تمہیں دوبارہ پیدا کرنے پر قادر ہے چاہے تم مٹی میں مل کر ریزہ ریزہ ہوچکے ہو۔