سورة التكوير - آیت 16

الْجَوَارِ الْكُنَّسِ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

اور چھپ جانے والے تاروں کی

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

١٦۔ ١ یہ ستارے دن کے وقت اپنے منظر سے پیچھے ہٹ جاتے ہیں اور نظر نہیں آتے اور یہ زحل، مستری، مریخ، زہرہ، عطارد ہیں، یہ خاص طور پر سورج کے رخ پر ہوتے ہیں بعض کہتے ہیں کہ سارے ہی ستارے مراد ہیں، کیونکہ سب ہی اپنے غائب ہونے کی جگہ پر غائب ہوجاتے ہیں یا دن کو چھپے رہتے ہیں۔