سورة الزخرف - آیت 49

وَقَالُوا يَا أَيُّهَ السَّاحِرُ ادْعُ لَنَا رَبَّكَ بِمَا عَهِدَ عِندَكَ إِنَّنَا لَمُهْتَدُونَ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

وہ موسیٰ سے کہتے اے جادوگر تیرے رب کی طرف سے جو تجھے حاصل ہے اس کی بنا پر ہمارے لیے اس سے بچنے کی دعا کر ہم ضرور راہ راست پر آجائیں گے

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

٤٩۔ ١ 'اپنے رب سے ' کے الفاظ اپنی مشرکانہ ذہنیت کی وجہ سے کہے کیونکہ مشرکوں میں مختلف رب اور اللہ ہوتے تھے، موسیٰ (علیہ السلام) اپنے رب سے یہ کام کروا لو! ٤٩۔ ٢ یعنی ہمارے ایمان لانے پر عذاب ٹالنے کا وعدہ۔ ٤٩۔ ٣ اگر عذاب ٹل گیا تو ہم تجھے اللہ کا سچا رسول مان لیں گے اور تیرے ہی رب کی عبادت کریں گے لیکن ہر دفعہ وہ اپنا یہ عہد توڑ دیتے، جیسا کہ اگلی آیت میں ہے اور سورۃ اعراف میں بھی گزرا۔