سورة الصافات - آیت 75

وَلَقَدْ نَادَانَا نُوحٌ فَلَنِعْمَ الْمُجِيبُونَ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

اور ہم کو نوح نے پکارا تو ہم نے اسے بہت اچھا جواب دیا

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

٧٥۔ ١ یعنی ساڑھے نو سو سال کی تبلیغ کے باوجود جب قوم کی اکثریت نے ان کو جھٹلایا تو انہوں نے محسوس کرلیا کہ ایمان لانے کی کوئی امید نہیں ہے تو اپنے رب کو پکارا (فَدَعَا رَبَّہٗٓ اَنِّیْ مَغْلُوْبٌ فَانْتَصِرْ) 54۔ القمر :10) یا اللہ میں مغلوب ہوں میری مدد فرما، چنانچہ ہم نے نوح (علیہ السلام) کی دعا قبول کی اور ان کی قوم کو طوفان بھیج کر ہلاک کردیا۔