سورة الشعراء - آیت 37

يَأْتُوكَ بِكُلِّ سَحَّارٍ عَلِيمٍ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

جو ہر ماہر جادوگر کو آپ کے پاس لے آئیں۔ (٣٧)

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

٣٧۔ ١ یعنی ان دونوں کو فی الحال اپنے حال پر چھوڑ دو، اور تمام شہروں سے جادوگروں کو جمع کرکے ان کا باہمی مقابلہ کیا جائے تاکہ ان کے کرتب کا جواب اور تیری تائید و نصرت ہوجائے۔ اور یہ اللہ ہی کی طرف سے سب انتطام تھا تاکہ لوگ ایک ہی جگہ جمع ہوجائیں اور دلائل کا بہ چشم خود مشاہدہ کریں، جو اللہ تعالیٰ نے حضرت موسیٰ (علیہ السلام) کو عطا فرمائے تھے۔