سورة الأنبياء - آیت 51

وَلَقَدْ آتَيْنَا إِبْرَاهِيمَ رُشْدَهُ مِن قَبْلُ وَكُنَّا بِهِ عَالِمِينَ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

” ہم نے پہلے سے ہی ابراہیم کو ہدایت بخشی اور ہم اس کو خوب جاننے والے تھے۔“ (٥١)

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

٥١۔ ١ مِنْ قَبْلُ سے مراد تو یہ ہے کہ ابراہیم (علیہ السلام) کو رشد و ہدایت (یا ہوشمندی) دینے کا واقع، موسیٰ (علیہ السلام) کو ابتدائے تورات سے پہلے کا ہے یہ مطلب ہے کہ ابراہیم (علیہ السلام) کو نبوت سے پہلے ہی ہوش مندی عطا کردی تھی۔ ٥١۔ ٢ یعنی ہم جانتے تھے کہ وہ اس رشد کا اہل ہے اور وہ اس کا صحیح استعمال کرے گا۔