سورة الحجر - آیت 80

وَلَقَدْ كَذَّبَ أَصْحَابُ الْحِجْرِ الْمُرْسَلِينَ

ترجمہ فہم القرآن - میاں محمد جمیل

” اور بلاشبہ ” حجر“ والوں نے رسولوں کو جھٹلادیا۔“ (٨٠) ”

تفسیر مکی - مولانا صلاح الدین یوسف صاحب

٨٠۔ ١ حضرت صالح (علیہ السلام) کی قوم ثمود کی بستیوں کا نام تھا۔ انھیں ( اَصْحٰبُ الْحِـجْرِ) 15۔ الحجر :80) (حجر والے) کہا گیا ہے۔ یہ بستی مدینہ اور تبوک کے درمیان تھی۔ انہوں نے اپنے پیغمبر حضرت صالح (علیہ السلام) کو جھٹلایا۔ لیکن یہاں اللہ تعالیٰ نے فرمایا ' انہوں نے پیغمبروں کو جھٹلایا، یہ اس لئے کہ ایک پیغمبر کی تکذیب ایسے ہی ہے جیسے سارے پیغمبروں کی تکذیب۔