سورة الأحزاب - آیت 41

يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا اذْكُرُوا اللَّهَ ذِكْرًا كَثِيرًا

ترجمہ عبدالسلام بھٹوی - عبدالسلام بن محمد

اے لوگو جو ایمان لائے ہو! اللہ کو یاد کرو، بہت یاد کرنا۔

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(34) اللہ تعالیٰ نے صادق الایمان مومنوں کو حکم دیا کہ وہ ہر وقت اور ہر حال میں اسے یاد کرتے رہیں، اس کی پاکی، اس کی حمد و ثنا اور اس کی بڑائی بیان کریں۔ ابن عباس (رض) کہتے ہیں کہ اللہ تعالیٰ نے اپنے بندوں پر جو بھی عمل واجب کیا تو اس کی ایک حد مقرر کردی اور عذر شرعی کی حالت میں اپنے بندے کو معذور جانا، سوائے ذکر الٰہی کے، اس کی کوئی حد مقرر نہیں کی اور اسے چھوڑ دینے والے کو معذور نہیں جانا، الایہ کہ کسی کی عقل ماری جائے، تو اللہ نے اسے اپنے ذکر سے معذور قرار دیا ہے۔ آیت (42) کی تفسیر کے ضمن میں مفسرین لکھتے ہیں کہ ’ دتسبیح“ ذکر میں داخل ہے، لیکن چونکہ ذکر الٰہی کے لئے اسے خصوصی حیثیت حاصل ہے اسی لئے اسے بطور خاص ذکر کیا گیا اور چونکہ صبح و شام تسبیح بیان کرنے کا خاص ثواب ہے اس لئے اس کی صراحت کردی گئی ہے۔ بعض مفسرین نے (کرھواصیلاً) سے فجر اور مغرب کی نماز، اور بعض نے فجر اور عصر کی نماز اور بعض نے تمام نمازیں مراد لی ہیں، اور لکھا ہے کہ یہ آیت نماز پنجگانہ کی اہمیت کی بہت بڑی دلیل ہے۔