سورة القصص - آیت 70

وَهُوَ اللَّهُ لَا إِلَٰهَ إِلَّا هُوَ ۖ لَهُ الْحَمْدُ فِي الْأُولَىٰ وَالْآخِرَةِ ۖ وَلَهُ الْحُكْمُ وَإِلَيْهِ تُرْجَعُونَ

ترجمہ عبدالسلام بھٹوی - عبدالسلام بن محمد

اور وہی اللہ ہے جس کے سوا کوئی معبود نہیں، اسی کے لیے دنیا اور آخرت میں سب تعریف ہے اور اسی کے لیے حکم ہے اور اسی کی طرف تم لوٹائے جاؤ گے۔

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(٣٧) حقیقت یہ ہے کہ اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں ہے ہر قسم کی حمد وثنا کا دنیا وآخرت میں وہی تنہاسزاوار ہے اور اسلیے کہ دونوں جہانوں کی نعمتوں کا مالک وہی ہے اس کے سوا کوئی ایک ذرے کا بھی مالک نہیں ہے ہر چیز میں اسی کی مشیت اور اسی کا فیصلہ نافذ ہوتا ہے اور سب کو مرنے کے بعد اسی کے پاس لوٹ کرجانا ہے اسب ات کی بین دلیل یہ ہے کہ اگر اللہ تعالیٰ قیامت تک کے لیے رات کوہی ثابت کردے اور دن کو غائب کردے تو کیا کوئی اور معبود ہے جو انسانوں کے لیے دن کی روشنی کو واپس لادے یا اگر قیامت تک کے لیے دن کو ثابت کردے اور رات کو غائب کردے تو کیا کوئی اور معبود ہے جو رات کو واپس لادے جس میں لوگ سکون حاصل کرتے ہیں۔ اس کا جواب قطعی طور پر یہی ہے کہ کوئی نہیں جو اسکی قدرت رکھتا ہو تو پھر انسان اس میں غوروفکر کرکے صرف خالق کل اور الہ واحد کی پرستش پر کیوں نہیں جم جاتا کیوں اس کے ساتھ غیروں کو شریک بناتا پھرتا ہے یقینا وہ اللہ کی ذات ہے جسنے اپنی رحمت سے رات اور دن بنائے ہیں تاکہ آدمی رات میں آرام کرے اور دن میں اپنے لیے اپنے بال بچوں کے لیے روزی حاصل کرے۔