جامع الترمذي - حدیث 911

أَبْوَابُ الحَجِّ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ ﷺ بَاب مَا جَاءَ فِي رُكُوبِ الْبَدَنَةِ​ صحيح حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ حَدَّثَنَا أَبُو عَوَانَةَ عَنْ قَتَادَةَ عَنْ أَنَسٍ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ رَأَى رَجُلًا يَسُوقُ بَدَنَةً فَقَالَ لَهُ ارْكَبْهَا فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنَّهَا بَدَنَةٌ قَالَ لَهُ فِي الثَّالِثَةِ أَوْ فِي الرَّابِعَةِ ارْكَبْهَا وَيْحَكَ أَوْ وَيْلَكَ قَالَ وَفِي الْبَاب عَنْ عَلِيٍّ وَأَبِي هُرَيْرَةَ وَجَابِرٍ قَالَ أَبُو عِيسَى حَدِيثُ أَنَسٍ حَدِيثٌ حَسَنٌ صَحِيحٌ وَقَدْ رَخَّصَ قَوْمٌ مِنْ أَهْلِ الْعِلْمِ مِنْ أَصْحَابِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَغَيْرِهِمْ فِي رُكُوبِ الْبَدَنَةِ إِذَا احْتَاجَ إِلَى ظَهْرِهَا وَهُوَ قَوْلُ الشَّافِعِيِّ وَأَحْمَدَ وَإِسْحَقَ و قَالَ بَعْضُهُمْ لَا يَرْكَبُ مَا لَمْ يُضْطَرَّ إِلَيْهَا

ترجمہ جامع ترمذی - حدیث 911

کتاب: حج کے احکام ومسائل ہدی کے اونٹ پر سوار ہونے کا بیان​ انس رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ نبی اکرمﷺ نے ایک شخص کو ہدی کے اونٹ ہانکتے دیکھا، تواسے حکم دیا' اس پر سوار ہوجا ؤ'، اس نے عرض کیا: اللہ کے رسول ! یہ ہدی کااونٹ ہے، پھر آپ نے اس سے تیسری یا چوتھی بار میں کہا: 'اس پر سوار ہوجاؤ، تمہارابرا ہو ۱؎ یا تمہاری ہلاکت ہو'۔امام ترمذی کہتے ہیں:۱- انس رضی اللہ عنہ کی حدیث حسن صحیح ہے،۲- اس باب میں علی، ابوہریرہ، اور جابر رضی اللہ عنہم سے بھی احادیث آئی ہیں، ۳- صحابہ کرام وغیرہ میں سے اہل علم کی ایک جماعت نے ہدی کے جانور پرسوار ہونے کی اجازت دی ہے، جب کہ و ہ اس کامحتاج ہو، یہی شافعی، احمد اور اسحاق بن راہویہ کا قول ہے،۴- بعض کہتے ہیں: جب تک مجبور نہ ہوہدی کے جانور پر سوار نہ ہو۔
تشریح : ۱؎ : یہ آپ نے تنبیہ اورڈانٹ کے طورپر فرمایا کیونکہ سواری کی اجازت آپ اسے پہلے دے چکے تھے اورآپ کو یہ پہلے معلوم تھا کہ یہ ہدی ہے ۔ ۱؎ : یہ آپ نے تنبیہ اورڈانٹ کے طورپر فرمایا کیونکہ سواری کی اجازت آپ اسے پہلے دے چکے تھے اورآپ کو یہ پہلے معلوم تھا کہ یہ ہدی ہے ۔