جامع الترمذي - حدیث 514

أَبْوَابُ الْجُمُعَةِ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ ﷺ بَاب مَا جَاءَ فِي كَرَاهِيَةِ الاِحْتِبَاءِ وَالإِمَامُ يَخْطُبُ​ حسن حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ حُمَيْدٍ الرَّازِيُّ وَعَبَّاسُ بْنُ مُحَمَّدٍ الدُّورِيُّ قَالَا حَدَّثَنَا أَبُو عَبْدِ الرَّحْمَنِ الْمُقْرِئُ عَنْ سَعِيدِ بْنِ أَبِي أَيُّوبَ حَدَّثَنِي أَبُو مَرْحُومٍ عَنْ سَهْلِ بْنِ مُعَاذٍ عَنْ أَبِيهِ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَهَى عَنْ الْحِبْوَةَ يَوْمَ الْجُمُعَةِ وَالْإِمَامُ يَخْطُبُ قَالَ أَبُو عِيسَى وَهَذَا حَدِيثٌ حَسَنٌ وَأَبُو مَرْحُومٍ اسْمُهُ عَبْدُ الرَّحِيمِ بْنُ مَيْمُونٍ وَقَدْ كَرِهَ قَوْمٌ مِنْ أَهْلِ الْعِلْمِ الْحِبْوَةَ يَوْمَ الْجُمُعَةِ وَالْإِمَامُ يَخْطُبُ وَرَخَّصَ فِي ذَلِكَ بَعْضُهُمْ مِنْهُمْ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عُمَرَ وَغَيْرُهُ وَبِهِ يَقُولُ أَحْمَدُ وَإِسْحَقُ لَا يَرَيَانِ بِالْحِبْوَةِ وَالْإِمَامُ يَخْطُبُ بَأْسًا

ترجمہ جامع ترمذی - حدیث 514

کتاب: جمعہ کے احکام ومسائل امام کے خطبہ دینے کی حالت میں احتباء کرنے کی کراہت کا بیان​ معاذبن انس جہنی رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ نبی اکرمﷺ نے جمعہ کے دن جب کہ امام خطبہ دے رہا ہو گھٹنوں کوپیٹ کے ساتھ ملاکربیٹھنے سے منع فرمایا ہے۔ امام ترمذی کہتے ہیں: ۱- یہ حدیث حسن ہے، ۲- عام اہل علم نے جمعہ کے دن حبوہ کومکروہ جاناہے، اوربعض نے اس کی رخصت دی ہے، انہیں میں سے عبداللہ بن عمروغیرہ ہیں۔احمداوراسحاق بن راہویہ بھی یہی کہتے ہیں، یہ دونوں امام کے خطبہ دینے کی حالت میں حبوہ کرنے میں کوئی مضائقہ نہیں سمجھتے ۱؎ ۔
تشریح : ۱؎ : حبوہ ایک مخصوص بیٹھک کا نام ہے، اس کی صورت یہ ہے کہ سرین پر بیٹھاجائے اوردونوں گھٹنوں کوکھڑارکھاجائے اور انہیں دونوں ہاتھوں سے باندھ لیاجائے، اس سے ممانعت کی وجہ یہ ہے کہ اس طرح بیٹھنے سے نیندآتی ہے اورہواخارج ہونے کا اندیشہ بڑھ جاتاہے۔ ۱؎ : حبوہ ایک مخصوص بیٹھک کا نام ہے، اس کی صورت یہ ہے کہ سرین پر بیٹھاجائے اوردونوں گھٹنوں کوکھڑارکھاجائے اور انہیں دونوں ہاتھوں سے باندھ لیاجائے، اس سے ممانعت کی وجہ یہ ہے کہ اس طرح بیٹھنے سے نیندآتی ہے اورہواخارج ہونے کا اندیشہ بڑھ جاتاہے۔