جامع الترمذي - حدیث 3544

أَبْوَابُ الدَّعَوَاتِ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ ﷺ بَاب خَلَقَ اللَّهُ مِائَةَ رَحْمَةٍ​ صحيح حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي الثَّلْجِ رَجُلٌ مِنْ أَهْلِ بَغْدَادَ أَبُو عَبْدِ اللَّهِ صَاحِبُ أَحْمَدَ بْنِ حَنْبَلٍ حَدَّثَنَا يُونُسُ بْنُ مُحَمَّدٍ حَدَّثَنَا سَعِيدُ بْنُ زَرْبِيٍّ عَنْ عَاصِمٍ الْأَحْوَلِ وَثَابِتٍ عَنْ أَنَسٍ قَالَ دَخَلَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ الْمَسْجِدَ وَرَجُلٌ قَدْ صَلَّى وَهُوَ يَدْعُو وَيَقُولُ فِي دُعَائِهِ اللَّهُمَّ لَا إِلَهَ إِلَّا أَنْتَ الْمَنَّانُ بَدِيعُ السَّمَوَاتِ وَالْأَرْضِ ذَا الْجَلَالِ وَالْإِكْرَامِ فَقَالَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَتَدْرُونَ بِمَ دَعَا اللَّهَ دَعَا اللَّهَ بِاسْمِهِ الْأَعْظَمِ الَّذِي إِذَا دُعِيَ بِهِ أَجَابَ وَإِذَا سُئِلَ بِهِ أَعْطَى قَالَ أَبُو عِيسَى هَذَا حَدِيثٌ غَرِيبٌ مِنْ هَذَا الْوَجْهِ وَقَدْ رُوِيَ مِنْ غَيْرِ هَذَا الْوَجْهِ عَنْ أَنَسٍ

ترجمہ جامع ترمذی - حدیث 3544

کتاب: مسنون ادعیہ واذکار کے بیان میں اللہ تعالیٰ نے سو رحمتیں پیدا کیں​ انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ مسجد میں آئے ، ایک شخص صلاۃ پڑھ رہاتھا اور دعا مانگتے ہوئے وہ اپنی دعامیں کہہ رہاتھا : ' اللَّہُمَّ لاَ إِلَہَ إِلاَّ أَنْتَ الْمَنَّانُ بَدِیعُ السَّمَوَاتِ وَالأَرْضِ ذَا الْجَلاَلِ وَالإِکْرَامِ' ۱؎ ۔نبی اکرم ﷺ نے فرمایا:' کیا تم جانتے ہو اس نے کس چیز سے دعا کی ہے؟ اس نے اللہ سے اس کے اس اسم اعظم کے ذریعہ دعا کی ہے کہ جب بھی اس کے ذریعہ دعا کی جائے گی اللہ اسے قبول کرلے گا، اور جب بھی اس کے ذریعہ کوئی چیز مانگی جائے گی اسے عطافرمادے گا'۔امام ترمذی کہتے ہیں:۱- یہ حدیث اس سند سے غریب ہے، ۲-یہ حدیث اس سند کے علاوہ دوسری سند سے بھی انس سے آئی ہے۔