جامع الترمذي - حدیث 260

أَبْوَابُ الصَّلاَةِ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ ﷺ اب مَا جَاءَ أَنَّهُ يُجَافِي يَدَيْهِ عَنْ جَنْبَيْهِ فِي الرُّكُوعِ​ صحيح حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ بُنْدَارٌ حَدَّثَنَا أَبُو عَامِرٍ الْعَقَدِيُّ حَدَّثَنَا فُلَيْحُ بْنُ سُلَيْمَانَ حَدَّثَنَا عَبَّاسُ بْنُ سَهْلِ بْنِ سَعْدٍ قَالَ اجْتَمَعَ أَبُو حُمَيْدٍ وَأَبُو أُسَيْدٍ وَسَهْلُ بْنُ سَعْدٍ وَمُحَمَّدُ بْنُ مَسْلَمَةَ فَذَكَرُوا صَلَاةَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَالَ أَبُو حُمَيْدٍ أَنَا أَعْلَمُكُمْ بِصَلَاةِ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ رَكَعَ فَوَضَعَ يَدَيْهِ عَلَى رُكْبَتَيْهِ كَأَنَّهُ قَابِضٌ عَلَيْهِمَا وَوَتَّرَ يَدَيْهِ فَنَحَّاهُمَا عَنْ جَنْبَيْهِ قَالَ وَفِي الْبَاب عَنْ أَنَسٍ قَالَ أَبُو عِيسَى حَدِيثُ أَبِي حُمَيْدٍ حَدِيثٌ حَسَنٌ صَحِيحٌ وَهُوَ الَّذِي اخْتَارَهُ أَهْلُ الْعِلْمِ أَنْ يُجَافِيَ الرَّجُلُ يَدَيْهِ عَنْ جَنْبَيْهِ فِي الرُّكُوعِ وَالسُّجُودِ

ترجمہ جامع ترمذی - حدیث 260

کتاب: صلاۃ کے احکام ومسائل رکوع میں اپنے ہاتھوں کو دونوں پہلوؤں سے الگ رکھنے کا بیان​ عباس بن سہل بن سعد کا بیان ہے کہ ابوحمید ،ابواسید،سہل بن سعد،اور محمد بن مسلمہ ( رضی اللہ عنہم ) چاروں اکٹھا ہوئے توان لوگوں نے رسول اللہﷺ کی صلاۃ کا ذکر کیا، ابوحمید رضی اللہ عنہ نے کہا: میں رسول اللہﷺ کی صلاۃ کو تم میں سب سے زیادہ جانتاہوں: آپﷺ نے رکوع کیا تو اپنے دونوں ہاتھ اپنے دونوں گھٹنوں پررکھے گویا آپ انہیں پکڑے ہوئے ہیں ، اورآپ نے اپنے دونوں ہاتھوں کو کمان کی تانت کی طرح (ٹائٹ)بنایا اور انہیں اپنے دونوں پہلوؤں سے جدا رکھا۔ امام ترمذی کہتے ہیں: ۱- ابوحمید کی حدیث حسن صحیح ہے، ۲- اس باب میں انس رضی اللہ عنہ سے بھی روایت ہے، ۳- اسی کو اہل علم نے اختیار کیاہے کہ آدمی رکوع اورسجدے میں ا پنے دونوں ہاتھوں کواپنے دونوں پہلوؤں سے جدارکھے۔