جامع الترمذي - حدیث 2042

أَبْوَابُ الطِّبِّ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ ﷺ بَاب مَا جَاءَ فِي شُرْبِ أَبْوَالِ الإِبِلِ​ صحيح حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ مُحَمَّدٍ الزَّعْفَرَانِيُّ حَدَّثَنَا عَفَّانُ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ سَلَمَةَ أَخْبَرَنَا حُمَيْدٌ وَثَابِتٌ وَقَتَادَةُ عَنْ أَنَسٍ أَنَّ نَاسًا مِنْ عُرَيْنَةَ قَدِمُوا الْمَدِينَةَ فَاجْتَوَوْهَا فَبَعَثَهُمْ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فِي إِبِلِ الصَّدَقَةِ وَقَالَ اشْرَبُوا مِنْ أَلْبَانِهَا وَأَبْوَالِهَا قَالَ أَبُو عِيسَى وَفِي الْبَاب عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ وَهَذَا حَدِيثٌ حَسَنٌ صَحِيحٌ

ترجمہ جامع ترمذی - حدیث 2042

کتاب: طب (علاج ومعالجہ) کے احکام ومسائل علاج میں اونٹ کا پیشاب پینے کابیان​ انس رضی اللہ عنہ کہتے ہیں: قبیلہ ٔ عرینہ کے کچھ لوگ مدینہ آئے،انہیں مدینہ کی آب وہوا راس نہیں آئی، تورسول اللہ ﷺ نے انہیں صدقہ کے اونٹوں کے ساتھ(چراگا ہ کی طرف) روانہ کیا اور فرمایا:' تم لوگ اونٹنیوں کے دودھ اور پیشاب پیو ۱؎ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں: ۱- یہ حدیث حسن صحیح ہے،۲- اس باب میں ابن عباس سے بھی روایت ہے۔