سنن النسائي - حدیث 5296

كِتَاب الزِّينَةِ بَاب ذِكْرِ مَا يُسْتَحَبُّ مِنْ لُبْسِ الثِّيَابِ وَمَا يُكْرَهُ مِنْهَا صحيح أَخْبَرَنَا إِسْحَقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ قَالَ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ يَزِيدَ قَالَ حَدَّثَنَا إِسْمَعِيلُ بْنُ أَبِي خَالِدٍ عَنْ أَبِي إِسْحَقَ عَنْ أَبِي الْأَحْوَصِ عَنْ أَبِيهِ قَالَ دَخَلْتُ عَلَى رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَرَآنِي سَيِّئَ الْهَيْئَةِ فَقَالَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ هَلْ لَكَ مِنْ شَيْءٍ قَالَ نَعَمْ مِنْ كُلِّ الْمَالِ قَدْ آتَانِي اللَّهُ فَقَالَ إِذَا كَانَ لَكَ مَالٌ فَلْيُرَ عَلَيْكَ

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 5296

کتاب: زینت سے متعلق احکام و مسائل کون سے کپڑے پہننے مستحب اور کون سے مکروہ ہیں ؟ حضرت ابو الاحوص کے والد محترم سے روایت ہے کہ میں رسول اللہﷺ کی خدمت میں حاضر ہوا تو آپ نے مجھے خراب سی حالت میں دیکھا ۔ نبی اکرمﷺ فرمانے لگے : ’’کیاتیرے پاس کچھ مال ہے ؟‘‘ میں عرض کیا : ہر قسم کامال اللہ تعالیٰ نے مجھے دےرکھا ہے ۔ آپ نے فرمایا : ’’تیرے پاس مال ہے تو تجھ پرنظر بھی آنا چاہیے ۔‘‘ تفصیل کےلیے دیکھیے فوائد ومسائل حدیث : 5225، 5226۔