سنن النسائي - حدیث 5172

كِتَابُ الزِّينَةِ مِنَ السُّنَنِ خَاتَمُ الذَّهَبِ صحيح أَخْبَرَنَا إِسْحَقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ قَالَ أَنْبَأَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ مُوسَى قَالَ أَنْبَأَنَا إِسْرَائِيلُ عَنْ إِسْمَعِيلَ بْنِ سُمَيْعٍ عَنْ مَالِكِ بْنِ عُمَيْرٍ عَنْ صَعْصَعَةَ بْنِ صُوحَانَ قَالَ قُلْتُ لِعَلِيٍّ انْهَنَا عَمَّا نَهَاكَ عَنْهُ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ نَهَانِي عَنْ الدُّبَّاءِ وَالْحَنْتَمِ وَحَلْقَةِ الذَّهَبِ وَلُبْسِ الْحَرِيرِ وَالْقَسِّيِّ وَالْمِيثَرَةِ الْحَمْرَاءِ

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 5172

کتاب: سنن کبری سے زینت کے متعلق احکام و مسائل سونے کی انگوٹھی کا بیان حضرت صعصعہ بن صوحان سے روایت ہے کہ میں نے حضرت علی ﷜ سے کہا: ہمیں اس چیز سے منع فرمائیے جس سے رسول اللہﷺ نے آپ کو منع فرمایا ہے۔ انہوں نے فرمایا: آپ نے مجھے کدو کے برتن اور سبز مٹکے ( کے نبیذ) ، سونے کی انگوٹھی، ریشم ک لباس، قسی کپڑوں اورسرخ ریشمی گدیلے سے منع فرمایا تھا۔ کدو کا برتن اور تارکول لگا ہوا مٹکا بے مسام ہوتے ہیں، لہذا ان میں نبیذ بنایا جائے تو اس میں جلدی نشہ پیدا ہوجاتا تھا، اسی لیے لوگوں نے جاہلیت میں یہ برتن شراب بنانے کے لیے مخصوص کررکھے تھے، لہذا آپ نے ابتدا میں ان برتنوں کے نبیذ سے بھی روک دیا تھا، بعد میں اجازت دے دی بشرطیکہ نشہ پیدا نہ ہو۔ ( تفصیل اپنے مقام پر گزر چکی ہے۔)