سنن النسائي - حدیث 5155

كِتَابُ الزِّينَةِ مِنَ السُّنَنِ تَحْرِيمُ الذَّهَبِ عَلَى الرِّجَالِ صحيح أَخْبَرَنَا أَحْمَدُ بْنُ حَرْبٍ قَالَ أَنْبَأَنَا أَسْبَاطٌ عَنْ مُغِيرَةَ عَنْ مَطَرٍ عَنْ أَبِي شَيْخٍ قَالَ بَيْنَمَا نَحْنُ مَعَ مُعَاوِيَةَ فِي بَعْضِ حَجَّاتِهِ إِذْ جَمَعَ رَهْطًا مِنْ أَصْحَابِ مُحَمَّدٍ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَالَ لَهُمْ أَلَسْتُمْ تَعْلَمُونَ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَهَى عَنْ لُبْسِ الذَّهَبِ إِلَّا مُقَطَّعًا قَالُوا اللَّهُمَّ نَعَمْ خَالَفَهُ يَحْيَى بْنُ أَبِي كَثِيرٍ عَلَى اخْتِلَافٍ بَيْنَ أَصْحَابِهِ عَلَيْهِ

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 5155

کتاب: سنن کبری سے زینت کے متعلق احکام و مسائل مردوں پر سونا حرام ہے حضرت ابوالشیخ سے روایت ہے کہ ایک دفعہ حضرت معاویہ ﷜ کے کسی حج کے دوران میں ہم ان کے ساتھ تھے کہ انہوں نے حضرت محمدﷺ کے صحابہ میں سے کئی صحابہ کو جمع کیا اور فرمایا: کیا تم نہیں جانتے کہ رسول اللہﷺ نے (مردوں کو) سونا پہننے سے منع فرمایا ہے الا یہ کہ وہ مختلف جگہوں پر تھوڑا تھوڑا ہو؟ انہوں نے کہا: اللہ کی قسم ! جی ہاں۔ یحییٰ بن ابی کثیر نے مطر ( الورق) کی مخالفت کی ہے، نیز اس ( یحییٰ بن ابی کثیر) پر اس کے شاگردوں نے بھی اختلاف کیا ہے۔ مطر نے بایں سند حدیث بیان کی ہے: عن ابی شیخ قال: بینما نحن مع معاویۃ جبکہ یحییٰ بن ابی کثیر نے بیان کیا ہے تو کہا ہے: حدثنی ابوشیخ الہنائی عن ابی حمان: ان معاویۃ.... تو یحییٰ نے ابو شیخ اور حضرت معاویہ کے درمیان ابوحمان کا و اسطہ بڑھادیا ہے، نیز یحییٰ بن ابی کثیر کے شاگردوں میں بھی اختلاف ہے۔ علی بن مبارک نے یحییٰ سے بیان کیا ہے تو کہا ہے: حدثنی ابوشیخ الہنائی عن ابی حمان ان معاویۃ لیکن جب یحییٰ کے شاگردحرب بن شداد نے اس سے بیان کیا ہے تو کہا ہے:حدثنی ابوشیخ عن اخیہ حمان : ان معاویۃ...... اس کی تفصیل اگلی روایات میں آرہی ہے۔