سنن النسائي - حدیث 5137

كِتَابُ الزِّينَةِ مِنَ السُّنَنِ النَّهْيُ لِلْمَرْأَةِ أَنْ تَشْهَدَ الصَّلَاةَ إِذَا أَصَابَتْ مِنْ الْبَخُورِ صحيح أَخْبَرَنِي يُوسُفُ بْنُ سَعِيدٍ قَالَ بَلَغَنِي عَنْ حَجَّاجٍ عَنْ ابْنِ جُرَيْجٍ أَخْبَرَنِي زِيَادُ بْنُ سَعْدٍ عَنْ ابْنِ شِهَابٍ عَنْ بُسْرِ بْنِ سَعِيدٍ عَنْ زَيْنَبَ الثَّقَفِيَّةِ قَالَتْ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِذَا شَهِدَتْ إِحْدَاكُنَّ الصَّلَاةَ فَلَا تَمَسَّ طِيبًا قَالَ أَبُو عَبْد الرَّحْمَنِ وَهَذَا غَيْرُ مَحْفُوظٍ مِنْ حَدِيثِ الزُّهْرِيِّ

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 5137

کتاب: سنن کبری سے زینت کے متعلق احکام و مسائل عورت نے خوشبو لگائی ہو تو وہ مسجد میں نماز کے لیے نہیں آسکتی حضرت زینب ثقفیہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: جب تم میں سے کوئی عورت نماز پڑھنے ( مسجد میں) آ ئے تو کسی بھی قسم کی خوشبو نہ لگائے۔ ابوعبدالرحمن ( امام نسائی﷫) نے کہا کہ یہ مذکورہ حدیث، زہری کی حدیث( کے طور پر) غیر محفوظ ( اور شاذ ) ہے۔ امام نسائی﷫ کے اس قول کا مطلب یہ ہے کہ مذکورہ روایت بسند عن الزہری عن بسر بن سعید عن زینب الثقفیۃ درست نہیں بلکہ صحیح روایت بایں سند ہے: عن بکیر عن بسر بن سعید عن زینب الثقفیۃ کیونکہ حفاظ محدثین﷭ نے یہ روایت اسی طرح ( بکری کی سندسے) بیان کی ہے۔ زہری کی سند سے بیان کرنے والا سنید ہے اور وہ ضعیف راوی ہے۔