سنن النسائي - حدیث 4405

كِتَابُ الضَّحَايَا بَابُ إِبَاحَةِ الذَّبْحِ بِالْمَرْوَةِ صحيح أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ بَشَّارٍ عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ جَعْفَرٍ قَالَ حَدَّثَنَا شُعْبَةُ قَالَ حَدَّثَنَا حَاضِرُ بْنُ الْمُهَاجِرِ الْبَاهِلِيُّ قَالَ سَمِعْتُ سُلَيْمَانَ بْنَ يَسَارٍ يُحَدِّثُ عَنْ زَيْدِ بْنِ ثَابِتٍ أَنَّ ذِئْبًا نَيَّبَ فِي شَاةٍ فَذَبَحُوهَا بِالْمَرْوَةِ فَرَخَّصَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فِي أَكْلِهَا

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 4405

کتاب: قربانی سے متعلق احکام و مسائل تیز دھار پتھر کے ساتھ ذبح کرنا بھی جائز ہے حضرت زید بن ثابت ؓ سے روایت ہے کہ ایک بھیڑ یے نے ایک بکری میں دانت گاڑ دیے ۔ لوگوں نے ( اس کو چھڑانے کے بعد) اسے ایک تیز دھار پتھر سے ذبح کردیا۔تو بنی اکرم ﷺ نے اس کے کھانے کی اجازت دی ۔ اگر کسی جانور کو درند ہ کاٹ کھائے اور اس میں روح باقی ہو تو اسے ذبح کردیاجائے ، وہ حلا ہو گا ۔ہاں اگر وہ ذبح کرنے سے پہلے بے جان ہوتو خواہ سارا خون نکل چکا ہو ، وہ جانور حر ام ہو گا۔