سنن النسائي - حدیث 4256

كِتَابُ الْفَرَعِ وَالْعَتِيرَةِ مَا يُدْبَغُ بِهِ جُلُودُ الْمَيْتَةِ صحيح أَخْبَرَنَا عَلِيُّ بْنُ حُجْرٍ قَالَ: حَدَّثَنَا شَرِيكٌ، عَنْ هِلَالٍ الْوَزَّانِ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُكَيْمٍ قَالَ: كَتَبَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِلَى جُهَيْنَةَ: «أَنْ لَا تَنْتَفِعُوا مِنَ الْمَيْتَةِ بِإِهَابٍ، وَلَا عَصَبٍ» قَالَ أَبُو عَبْدِ الرَّحْمَنِ: «أَصَحُّ مَا فِي هَذَا الْبَابِ فِي جُلُودِ الْمَيْتَةِ، إِذَا دُبِغَتْ حَدِيثُ الزُّهْرِيِّ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ، عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ عَنْ مَيْمُونَةَ وَاللَّهُ تَعَالَى أَعْلَمُ»

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 4256

کتاب: فرع اور عتیرہ سے متعلق احکام و مسائل مردار کا چمڑے کو کس چیز سے دباغت دی جائے؟ حضرت عبداﷲ بن عکیم سے منقول ہے کہ رسول اﷲﷺ نے جہینہ قبیلے کی طرف یہ تحریر لکھ کر بھیجی: ’’تم مردار کے (غیرمد بوغ) چمڑے اور پٹھے کو استعمال نہ کرو۔ ‘‘ ابو عبدالرحمن (امام انسائی رحمہ اللہ ) نے فرمایا: اس مسئلے میں صحیح ترین روایت وہ ہے جس میں دباغت سے چمڑے کے پاک ہونے کاذکر ہے، یعنی زہری عن عبید اﷲ، عن ابن عباس، عن میمونہ والی روایت۔ گویا امام صاحب اس روایت کو ترجیح دے رہے ہیں۔ دونوں روایات میں تطبیق پیچھے گزر چکی ہے۔