سنن النسائي - حدیث 3850

كِتَابُ الْأَيْمَانِ وَالنُّذُورِ مَنْ مَاتَ وَعَلَيْهِ نَذْرٌ صحيح أَخْبَرَنَا مُحَمَّدُ بْنُ آدَمَ وَهَارُونُ بْنُ إِسْحَقَ الْهَمْدَانِيُّ عَنْ عَبْدَةَ عَنْ هِشَامٍ وَهُوَ ابْنُ عُرْوَةَ عَنْ بَكْرِ بْنِ وَائِلٍ عَنْ الزُّهْرِيِّ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ قَالَ جَاءَ سَعْدُ بْنُ عُبَادَةَ إِلَى النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَالَ إِنَّ أُمِّي مَاتَتْ وَعَلَيْهَا نَذْرٌ فَلَمْ تَقْضِهِ قَالَ اقْضِهِ عَنْهَا

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 3850

کتاب: قسم اور نذر سے متعلق احکام و مسائل جو شخص فوت ہوجائے اور اس کے ذمے نذر باقی ہو تو؟ حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے‘ انہوں نے فرمایا: حضرت سعد بن عبادہ رضی اللہ عنہ نبی اکرمﷺ کی خدمت میں حاضر ہوئے اور کہا: میری والدہ فوت ہوگئی ہے۔ اس کے ذمے ایک نذر تھی جسے وہ ادا نہیں کرسکتی تھی۔ آپ نے فرمایا: ’’تم اس کی طرف سے ادا کردو۔‘‘ تفصیل کے لیے دیکھیے حدیث نمبر:3680‘3694۔