سنن النسائي - حدیث 2867

الْمَوَاقِيتِ دُخُولُ مَكَّةَ لَيْلًا صحيح أَخْبَرَنَا هَنَّادُ بْنُ السَّرِيِّ عَنْ سُفْيَانَ عَنْ إِسْمَعِيلَ بْنِ أُمَيَّةَ عَنْ مُزَاحِمٍ عَنْ عَبْدِ الْعَزِيزِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ خَالِدِ بْنِ أُسَيْدٍ عَنْ مُحَرِّشٍ الْكَعْبِيِّ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ خَرَجَ مِنْ الْجِعِرَّانَةِ لَيْلًا كَأَنَّهُ سَبِيكَةُ فِضَّةٍ فَاعْتَمَرَ ثُمَّ أَصْبَحَ بِهَا كَبَائِتٍ

ترجمہ سنن نسائی - حدیث 2867

کتاب: مواقیت کا بیان رات کے وقت مکہ مکرمہ میں داخل ہونا حضرت محرش کعبی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبیﷺ جعرانہ سے ایسی رات میں نکلے جو پگھلی ہوئی چاندی کی طرح سفید تھی، پھر آپ نے (مکہ مکرمہ پہنچ کر) عمرہ فرمایا اور پھر صبح سے پہلے واپس جعرانہ میں لوٹ آئے گویا کہ رات یہیں رہے ہوں۔ ’’پگھلی ہوئی چاندی کی طرح‘‘ گویا وہ چودھویں رات تھی جو بہت روشن ہوتی ہے۔ یہ الفاظ رسول اللہﷺ کے چہرہ مبارک کی صفت بھی ہو سکتے ہیں، یعنی آپ کا چہرہ پگھلی ہوئی چاندی کی طرح روشن اور صاف ستھرا تھا۔ واللہ اعلم۔ باقی مباحث اوپر گزر چکے ہیں۔