Book - حدیث 3768

كِتَابُ الْأَدَبِ بَابُ كَرَاهِيَةِ الْوَحْدَةِ صحیح حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ حَدَّثَنَا وَكِيعٌ عَنْ عَاصِمِ بْنِ مُحَمَّدٍ عَنْ أَبِيهِ عَنْ ابْنِ عُمَرَ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لَوْ يَعْلَمُ أَحَدُكُمْ مَا فِي الْوَحْدَةِ مَا سَارَ أَحَدٌ بِلَيْلٍ وَحْدَهُ

ترجمہ Book - حدیث 3768

کتاب: اخلاق وآداب سے متعلق احکام ومسائل باب: تنہائی اچھی نہیں حضرت عبداللہ بن عمر ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:اگر تمہیں معلوم ہوجائے کہ تنہائی میں کیا کیا(خرابی اور نقصان)ہے تو کوئی شخص رات کو اکیلا سفر نہ کرے۔ ۱ ۔ لمبے سفر میں بسا اوقت ایسے حالات پیش آسکتے ہیں کہ ساتھی سے تعاون اور مدد حاصل کرنے کی ضرورت پڑے ، اس لیے سفر میں نیک ہم سفر کا ساتھ ہونا چاہیے۔ ۲۔ رات کو زیادہ خطرات پیش آسکتے ہیں، اس لیے رات کو اکیلے سفر کرنے سے اجتناب ٖضروری ہے۔۳۔ اگر انتہائی مجبوری ہو تو اکیلے سفر کیا جا سکتا ہے جیسے حضرت ابوذر ؓ نے ہجرت کا سفر اکیلے طے کیا تھا۔۴۔ آبادی میں ایک جگہ سے دوسری جگہ جانا عرف عام میں سفر نہیں کہلاتا اس میں تنہائی جائز ہے۔