Book - حدیث 3607

كِتَابُ اللِّبَاسِ بَابُ مَنْ لَبِسَ شُهْرَةً مِنَ الثِّيَابِ حسن حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ الْمَلِكِ بْنِ أَبِي الشَّوَارِبِ حَدَّثَنَا أَبُو عَوَانَةَ عَنْ عُثْمَانَ بْنِ الْمُغِيرَةِ عَنْ الْمُهَاجِرِ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ مَنْ لَبِسَ ثَوْبَ شُهْرَةٍ فِي الدُّنْيَا أَلْبَسَهُ اللَّهُ ثَوْبَ مَذَلَّةٍ يَوْمَ الْقِيَامَةِ ثُمَّ أَلْهَبَ فِيهِ نَارًا

ترجمہ Book - حدیث 3607

کتاب: لباس سے متعلق احکام ومسائل باب: شہرت کے لئے لباس پہننا(گناہ ہے) حضرت عبداللہ بن عمرؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:جو شخص دنیا میں شہرت کا لباس پہنے گا ، اللہ تعالیٰ اسے قیامت کے دن ذلت کا لباس پہنائے گا ، پھر اس میں آگ بھڑکادے گا ۔ ۱۔ شہرت کے لباس سے مراد بہت قیمتی لباس بھی ہے کہ لوگ اس لی باتیں کریں اور اس کی ثروت و امارت کی شہرت ہو اور بہت ہلکا اور نکما لباس بھی ہے کہ لوگوں میں اس کے زہد اور بزرگی کی شہرت ہو۔ ۲۔ ایسا لباس پہننے والے کا مقصد یہ ہوتا ہے کہ لوگ اس کی دولت سے مرعوب ہو کر اس کی عزت کریں یا اسے خدا رسیدہ سمجھ کر اس کے آگے عقیدت سے سر جھکائیں۔ اس گناہ کی سزا یہ ہے کہ اسے قیامت کے دن ایسا لباس ملے گا جس کی وجہ سے وہ سب کی نظروں میں ذلیل ہو کر رہ جائے گا ۔ جہنم میں جلنے کا عذاب اس کے علاوہ ہے۔