Book - حدیث 3368

كِتَابُ الْأَطْعِمَةِ بَابُ أَكْلِ الثِّمَارِ ضعیف حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ عُثْمَانَ بْنِ سَعِيدِ بْنِ كَثِيرِ بْنِ دِينَارٍ الْحِمْصِيُّ قَالَ: حَدَّثَنَا أَبِي قَالَ: حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ عِرْقٍ، عَنْ أَبِيهِ، عَنِ النُّعْمَانِ بْنِ بَشِيرٍ، قَالَ أُهْدِيَ لِلنَّبِيِّ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، عِنَبٌ مِنَ الطَّائِفِ، فَدَعَانِي فَقَالَ: «خُذْ هَذَا الْعُنْقُودَ، فَأَبْلِغْهُ أُمَّكَ» فَأَكَلْتُهُ قَبْلَ أَنْ أُبْلِغَهُ إِيَّاهَا، فَلَمَّا كَانَ بَعْدَ لَيَالٍ، قَالَ لِي: «مَا فَعَلَ الْعُنْقُودُ؟ هَلْ أَبْلَغْتَهُ أُمَّكَ؟» قُلْتُ: لَا. قَالَ: فَسَمَّانِي غُدَرَ ‘‘

ترجمہ Book - حدیث 3368

کتاب: کھانوں سے متعلق احکام ومسائل باب: پھل کھانا حضرت نعمان بن بشیر سے روایت ہے،انہوں نے کہا :نبیﷺکی خدمت میں طائف کےانگور ہدیہ کے طور پر پیش کیے گئے ۔آپﷺنے مجھے بلایااور فرمایا:’’یہ خوشہ اپنی والدہ کے پاس لے جاؤ ۔‘‘میں نے والدہ کے پاس پہنچانے سے پہلے خود ہی کھا لیا۔پھر کئی راتوں کے بعد رسول اللہ ﷺنے مجھے فرمایا:’’اس خوشے کا کیا بنا؟کیا وہ اپنی کو پہنچا دیا تھا؟‘‘میں نے کہا :نہیں۔رسول اللہﷺنے میرا نام دھوکے باز رکھ دیا(مجھے دھوکے باز فرمایا)