Book - حدیث 2877

كِتَابُ الْجِهَادِ بَابُ السَّبَقِ وَالرِّهَانِ صحیح حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ مُحَمَّدٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ نُمَيْرٍ عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ عَنْ نَافِعٍ عَنْ ابْنِ عُمَرَ قَالَ ضَمَّرَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ الْخَيْلَ فَكَانَ يُرْسِلُ الَّتِي ضُمِّرَتْ مِنْ الْحَفْيَاءِ إِلَى ثَنِيَّةِ الْوَدَاعِ وَالَّتِي لَمْ تُضَمَّرْ مِنْ ثَنِيَّةِ الْوَدَاعِ إِلَى مَسْجِدِ بَنِي زُرَيْقٍ

ترجمہ Book - حدیث 2877

کتاب: جہاد سے متعلق احکام ومسائل باب: گھوڑ دوڑ کی انعا می رقم کا بیا ن حضرت عبداللہ بن عمر ؓ سے روایت ہےانھوں نے فرمایا:رسول اللہ ﷺنے گھوڑوں کی تضمیر کی-آب تضمیر شدہ گھوڑوں کو حفیاءسے ثنیۃ الوداع تک دوڑاتےتھے۔اور غیر تضمیرشدہ گھوڑوں کوثنیۃ الوداع سے مسجد بنی زریق تک۔ 1۔تضمیر سے مراد گھوڑوں کی ایک خاص انداز سے تربیت کرنا ہے۔اس کا طریقہ یہ ہے کہ کچھ عرصہ گھوڑے کو خوب کھلا پلا کر موٹا کرتے ہیں پھر اس کا چارہ کم کردیتے ہیں اور اسے ایک کوٹھڑی میں بند کردیتے ہیں۔اسے وہاں پسینہ آتا ہے اور وہیں خشک ہوتا ہے۔اور وہ بغیر تھکے زیادہ دوڑ سکتاہے۔۔ 2۔(حفياء)اور(ثنيةالوداع) دو جگہوں کے نام ہیں جن کے درمیان تین میل کا فاصلہ ہے۔ 3۔(ثنية الوداع) سے مسجد بنی زریق تک ایک میل کا فاصلہ ہے۔ 4۔دور کے مقابلے میں مناسب فاصلے کا تعین ہونا چاہیے۔ 5۔بنی زریق ایک قبیلے کا نام ہے۔وہ لوگ اس مسجد کے قریب رہتےاور اس میں نماز پڑھتے تھے لہذا مسجد کو کسی قبیلے یاگروہ کی طرف پہچان کے لیے منسوب کرنے میں کوئی حرج نہیں اگرچہ سب مسجدیں اللہ ہی کی ہوتی ہیں۔