Book - حدیث 1500

كِتَابُ الْجَنَائِزِ بَابُ مَا جَاءَ فِي الدُّعَاءِ فِي الصَّلَاةِ عَلَى الْجِنَازَةِ صحیح حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ حَكِيمٍ قَالَ: حَدَّثَنَا أَبُو دَاوُدَ الطَّيَالِسِيُّ قَالَ: حَدَّثَنَا فَرَجُ بْنُ الْفَضَالَةِ قَالَ: حَدَّثَنِي عِصْمَةُ بْنُ رَاشِدٍ، عَنْ حَبِيبِ بْنِ عُبَيْدٍ، عَنْ عَوْفِ بْنِ مَالِكٍ، قَالَ شَهِدْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ صَلَّى عَلَى رَجُلٍ مِنَ الْأَنْصَارِ فَسَمِعْتُهُ يَقُولُ: «اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَيْهِ، وَاغْفِرْ لَهُ وَارْحَمْهُ، وَعَافِهِ وَاعْفُ عَنْهُ، وَاغْسِلْهُ بِمَاءٍ وَثَلْجٍ وَبَرَدٍ، وَنَقِّهِ مِنَ الذُّنُوبِ وَالْخَطَايَا كَمَا يُنَقَّى الثَّوْبُ الْأَبْيَضُ مِنَ الدَّنَسِ، وَأَبْدِلْهُ بِدَارِهِ دَارًا خَيْرًا مِنْ دَارِهِ، وَأَهْلًا خَيْرًا مِنْ أَهْلِهِ، وَقِهِ فِتْنَةَ الْقَبْرِ وَعَذَابَ النَّارِ» قَالَ عَوْفٌ، فَلَقَدْ رَأَيْتُنِي فِي مُقَامِي ذَلِكَ أَتَمَنَّى أَنْ أَكُونَ مَكَانَ ذَلِكَ الرَّجُلِ

ترجمہ Book - حدیث 1500

کتاب: جنازے سے متعلق احکام و مسائل باب : نماز جنازہ کی دعائیں عوف بن مالک اشجعی ؓ سے روایت ہے، انہوں نے فرمایا: میں نے رسول اللہ ﷺ کو دیکھا کہ آپ نے ایک انصاری آدمی کا جنازہ پڑھایا۔ میں نے سنا کہ آپ فر رہے تھے: ( اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَيْهِ وَاغْفِرْ لَهُ وَارْحَمْهُ وَعَافِهِ وَاعْفُ عَنْهُ وَاغْسِلْهُ بِمَاءٍ وَثَلْجٍ وَبَرَدٍ وَنَقِّهِ مِنَ الذُّنُوبِ وَالْخَطَايَا كَمَا يُنَقَّى الثَّوْبُ الأَبْيَضُ مِنَ الدَّنَسِ وَأَبْدِلْهُ بِدَارِهِ دَارًا خَيْرًا مِنْ دَارِهِ وَأَهْلاً خَيْرًا مِنْ أَهْلِهِ وَقِهِ فِتْنَةَ الْقَبْرِ وَعَذَابَ النَّارِ ) ’’اے اللہ! اس پر رحمت فرما، اس کی مغفرت فر اس پر رحم کر، اسے عافیت دے اسے معاف کر دے، اسے پانی، برف اور اولوں سے دھو ڈال ، اسے گناہوں سے اس طرح پاک کر دے ، جیسے سفید کپڑےکو میل کچیل سے صاف کیا جاتا ہے۔ اسے اس کے گھر کے بدلے اس کے گھر سے بہتر گھر اور اس کے کنبے سے بہتر کنبہ عطا فر اور اسے قبر کی آزمائش سے اور آگ کے عذاب سے محفوظ فرما۔‘‘ حضرن عوف ؓ نے فرمایا:اس مقام پر میرا جی چاہا کہ کاش میں اس(فوت شدہ) آدمی کی جگہ ہوتا(تو رسول اللہﷺ میرے لیے یہ دعا فرماتے۔) 1۔یہ دعا بھی اس لہاظ سے اہم ہے کہ اس میں صرف میت کے لئے دعا ہے جو نماز جنازہ کا اصل مقصود ہے ۔2۔پانی ۔برف۔اور اولوں کے ساتھ دھونے سے اس کی کامل صفائی اور طہارت سے مراد ہے۔چونکہ گناہوں کاشیطان سے اور جہنم کی آگ سے تعلق ہے۔اس لئے گناہوں کا اثر ختم کرنے کےلئے ٹھنڈی چیزوں کازکر کیا گیا۔3۔دنیا کے گھر سے بہتر گھر جنت کاگھر ہے اور دنیا کے اہل وعیال سے بہتراہل وعیال جنت کی حوریں ہیں۔اس لہاظ سے یہ اس کے لئے دخول جنت کی دعا ہے۔4۔اس میں عذاب قبر کاثبوت ہے۔5۔اس میں نماز جنازہ جہری آواز سے پڑھنے کا بھی ثبوت ہے۔