Book - حدیث 1379

كِتَابُ إِقَامَةِ الصَّلَاةِ وَالسُّنَّةُ فِيهَا بَابُ مَا جَاءَ فِي صَلَاةِ الضُّحَى صحیح حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ بْنُ عُيَيْنَةَ عَنْ يَزِيدَ بْنِ أَبِي زِيَادٍ عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ الْحَارِثِ قَالَ سَأَلْتُ فِي زَمَنِ عُثْمَانَ بْنِ عَفَّانَ وَالنَّاسُ مُتَوَافِرُونَ أَوْ مُتَوَافُونَ عَنْ صَلَاةِ الضُّحَى فَلَمْ أَجِدْ أَحَدًا يُخْبِرُنِي أَنَّهُ صَلَّاهَا يَعْنِي النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ غَيْرَ أُمِّ هَانِئٍ فَأَخْبَرَتْنِي أَنَّهُ صَلَّاهَا ثَمَانَ رَكَعَاتٍ

ترجمہ Book - حدیث 1379

کتاب: نماز کی اقامت اور اس کا طریقہ باب: نمازِضحیٰ کا بیان عبداللہ بن حارث ؓ سے روایت ہے انہوں نے کہا: عثمان بن عفان ؓ کے زمانے میں جب صحابہ کرام ؓم کثیر تعداد میں موجود تھے، میں نے نماز ضحیٰ کے متعلق دریافت کیا تو مجھے ام ہانی ؓا کے سوا کوئی شخص ایسا نہ ملا جو مجھے بتائے کہ رسول اللہ ﷺ نے یہ نماز پڑھی ہے البتہ ام ہانئ ؓا نے مجھے بتایا کہ رسول اللہ ﷺ نے اس نماز کی آٹھ رکعتیں پڑھی تھیں۔ 1۔صحیح مسلم میں حضرت زید بن ارقم رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے اس نماز کی مشروعیت کے بارے میں نبی اکرمصلی اللہ علیہ وسلم کاارشاد مروی ہے۔جو حدیث 1374۔کے فائدہ میں زکر ہوا۔2۔اکثر صحابہ کرام رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو اس نماز کاعلم شاید اس لئے نہیں ہوسکا۔کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم یہ نماز ہمیشہ نہیں پڑھتے تھے۔اورجب پڑھتے تو گھر میں پڑھتے تھے۔