Book - حدیث 1056

كِتَابُ إِقَامَةِ الصَّلَاةِ وَالسُّنَّةُ فِيهَا بَابُ عَدَدِ سُجُودِ الْقُرْآنِ ضعیف حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ يَحْيَى حَدَّثَنَا سُلَيْمَانُ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ الدِّمَشْقِيُّ حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ فَائِدٍ حَدَّثَنَا عَاصِمُ بْنُ رَجَاءِ بْنِ حَيْوَةَ عَنْ الْمَهْدِيِّ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ عُبَيْدَةَ بْنِ خَاطِرٍ قَالَ حَدَّثَتْنِي عَمَّتِي أُمُّ الدَّرْدَاءِ عَنْ أَبِي الدَّرْدَاءِ قَالَ سَجَدْتُ مَعَ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِحْدَى عَشْرَةَ سَجْدَةً لَيْسَ فِيهَا مِنْ الْمُفَصَّلِ شَيْءٌ الْأَعْرَافُ وَالرَّعْدُ وَالنَّحْلُ وَبَنِي إِسْرَائِيلَ وَمَرْيَمُ وَالْحَجُّ وَسَجْدَةُ الْفُرْقَانِ وَسُلَيْمَانُ سُورَةِ النَّمْلِ وَالسَّجْدَةُ وَفِي ص وَسَجْدَةُ الْحَوَامِيمِ

ترجمہ Book - حدیث 1056

کتاب: نماز کی اقامت اور اس کا طریقہ باب: قرآن مجید کے سجدوں کی تعداد سیدنا ابو درداء ؓ سے روایت ہے، انہوں نے فرمایا: میں نے نبی ﷺ کے ساتھ گیارہ سجدے کئے ان میں مفصل سورتوں میں کوئی سجدہ نہیں۔( یہ سجدے ان سورتوں میں ہیں) سورہٴ اعراف، سورہٴ رعد، سورہٴ نحل، سورہٴ بنی اسرائیل، سروہٴ مریم، سورہٴ حج، اور سورہٴ فرقان کا سجدہ اور سورہٴ نمل کا سیدنا سلیمان کا واقعہ والا سجدہ۔ سورہٴ سجدہ ، سورہٴ ص اور حم والی سورت کا سجدہ ( سورہٴ حم السجدہ۔) 1-سنن ابن ماجہ کے اکثر نسخوں میں سورہ نمل کی بجائے سلیمان سورۃ نحل کے الفاظ ہیں۔رایوں نے حضرت سلیمان کا زکر غالباً اس لئے کیا کہ اسےسورہ نمل (میم سے) پڑھا جائے۔کیونکہ اسی صورت میں حضرت سلیمان علیہ السلام کازکر ہے۔غلطی سے سورہ نحل (حاء سے) نہ پڑھا جائے۔اس کے باوجود مطبوعہ نسخوں میں ح سے نحل ہی لکھا گیا حالانکہ سورہ نحل کا زکر اس حدیث میں سورہ رعد کے بعد موجود ہے۔2۔یہ روایت ضعیف ہے۔کیونکہ صحیح احادیث سے پندرہ سجدے ثابت ہیں۔