الادب المفرد - حدیث 989

كِتَابُ بَابُ السَّلَامُ اسْمٌ مِنْ أَسْمَاءِ اللَّهِ عَزَّ وَجَلَّ حَدَّثَنَا شِهَابٌ قَالَ: حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ سَلَمَةَ، عَنْ حُمَيْدٍ، عَنْ أَنَسٍ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: ((إِنَّ السَّلَامَ اسْمٌ مِنْ أَسْمَاءِ اللَّهِ تَعَالَى، وَضَعَهُ اللَّهُ فِي الْأَرْضِ، فَأَفْشُوا السَّلَامَ بَيْنَكُمْ))

ترجمہ الادب المفرد - حدیث 989

کتاب ’’السلام‘‘ اللہ تعالیٰ کے ناموں میں سے ایک نام ہے حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:’’السلام اللہ تعالیٰ کے ناموں میں سے ایک نام ہے جسے اللہ تعالیٰ نے زمین میں رکھا ہے، لہٰذا سلام کو آپس میں عام کرو۔‘‘
تشریح : السلام کے معنی سلامتی اور تحفہ کے ہیں۔ا ور یہ اللہ تعالیٰ کے ناموں میں سے ایک نام بھی ہے۔ جب یہ اللہ تعالیٰ کا نام ہو تو اس کے معنی ہوں گے:ہر قسم کے عیوب اور نقائص سے پاک۔
تخریج : حسن:المعجم الکبیر للطبراني:۱۰؍ ۱۸۲۔ عن ابن مسعود۔ السلام کے معنی سلامتی اور تحفہ کے ہیں۔ا ور یہ اللہ تعالیٰ کے ناموں میں سے ایک نام بھی ہے۔ جب یہ اللہ تعالیٰ کا نام ہو تو اس کے معنی ہوں گے:ہر قسم کے عیوب اور نقائص سے پاک۔